فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2577
(200) جرابوں پر مسح کرنے کے بعد اتار دینا اور نماز پڑھنا
شروع از بتاریخ : 17 February 2013 04:19 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

 جرابوں یا بوٹوں پر مسح کیا ، پھر بعد میں اس نے جرابیں اُتار دیں ، تو کیا وضوء دوبارہ کرے یا صرف پاؤں دھو لے یا کچھ بھی کرنے کی ضرورت نہیں اسی طرح نماز پڑھ سکتا ہے؟

_____________________________________________________________________

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

آپ نے تین قول ذکر کیے ہیں:

ذھب إلی کل واحد منھا ذاھبون وعمل بکل واحد منھا عاملون

شیخ البانی ، حافظ ابن حزم اور شیخ الاسلام حافظ ابن تیمیہ رحمہم اللہ تعالیٰ نے آپ کے تیسرے نمبر پر ذکر کردہ قول کو اختیار کیا اور ترجیح دی ہے ۔ دلیل یہ ہے کہ سر پر مسح کرنے کے بعد سر کے بال منڈا دے تو مسح دوبارہ نہیں کیا جاتا نہ ہی وضوء دہرایا جاتا ہے ۔ تفصیل کے لیے علامہ جمال الدین قاسمی رحمہ اللہ تعالیٰ کے رسالہ ’’المسح علی الجوربین ‘‘ کے اواخر میں البانی صاحب کے اضافہ جات کا مطالعہ فرما لیں۔

فتاویٰ علمائے حدیث

کتاب الصلاۃجلد 1

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)