فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 25592
(1049) نمازِ عید مسجد میں پڑھنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 14 March 2018 02:02 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا بغیر کسی عذر اور وجہ کے نمازِ عید مسجد میں پڑھی جا سکتی ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

بلا عذر اور بلا وجہ مسجد میں نماز عید ادا کرنا درست نہیں۔ اگر کوئی اس کی خلاف ورزی کرکے بلا سبب نمازِ عید مسجد میں پڑھتا ہے۔ نماز تو ہو جائے گی، لیکن فضیلت سے محروم ہے۔ مزید تفصیل کے لیے ملاحظہ ہو! ’’المرعاۃ‘‘ (۲/۳۴۵)

ہمارے شیخ محدث روپڑی رحمہ اللہ  کے شیخ امام عبد الجبار غزنوی رحمہ اللہ  اپنے فتاویٰ میں رقمطراز ہیں:ہر چند سنت و افضل عید کی نماز صحراء میں ہے، مگر مسجد میں پڑھنے کا جواز بِلا خلاف ہے۔ لہٰذا حرمین شریفین میں قدیم الأیام ،سے یہی متعارف ہے۔

  ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ حافظ ثناء اللہ مدنی

کتاب الصلوٰۃ:صفحہ:835

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)