فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 25585
(1042) نمازِ جمعہ کی سنتیں
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 14 March 2018 01:49 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

نماز جمعہ کی سنتوں کے بارے میں معلوم کرنا ہے کہ کل کتنی ہیں؟ فرض سے قبل کتنی اور بعد میں کتنی؟ اس میں سنت مؤکدہ اور غیر مؤکدہ کون سی ہیں؟ براہِ کرام بحوالہ حدیث رکعتوں کا شمار اور تاکید اور غیر تاکید کی پوری تحقیق کے ساتھ وضاحت فرما کر عنداللہ ماجور اور عندالناس مشکور ہوں۔


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

شرعی اصطلاح میں فرضوں کے علاوہ سب نوافل ہیں۔ مؤکدہ غیر مؤکدہ فقہائے کرام کی اصطلاح ہے۔ نمازِ جمعہ سے قبل نوافل کی کوئی تعداد مقرر نہیں۔ جتنے ممکن ہو پڑھے جاسکتے ہیں۔

حدیث میں ہے: ’’ثُمَّ یُصَلِّی مَا کُتِبَ لَهٗ ‘‘صحیح البخاری،بَابُ الدُّهنِ لِلجُمُعَةِ،رقم:۸۸۳

اور صحیح مسلم میں ہے ’’فَصَلّٰی مَا قدر له‘‘ اور نمازِ جمعہ کے بعد چار رکعات ہیں۔2تفصیل کے لیے ملاحظہ ہو! ’’القول المقبول‘‘ (ص:۶۲۵)

  ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ حافظ ثناء اللہ مدنی

کتاب الصلوٰۃ:صفحہ:830

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)