فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2556
ظہر کی نماز کو گرمیوں میں ٹھنڈا کرنا
شروع از بتاریخ : 17 February 2013 02:48 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

 ظہر کی نماز گرمیوں میں ٹھنڈی کر کے پڑھو۔ کیا ایسی کوئی حدیث ہے۔

 


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ہاں۔ صحیح بخاری اور صحیح مسلم میں سخت گرمی میں ظہر کو ٹھنڈی کرنے کی حدیث موجود ہے۔
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جب گرمی سخت ہو تو نمازِ ظہر ٹھنڈے وقت میں پڑھو۔ (مطلب یہ ہے کہ شدت کی گرمی میں سورج ڈھلتے ہی فوراً نہ پڑھو تھوڑی دیر کر لو)  ( بخاري، مواقیت الصلاة، باب الابراد بالظہر فی شدة الحر، مسلم،المساجد،باب استحباب الابراد بالظہر)

 

فتاوی احکام ومسائل

کتاب الطہارۃ ج 2 ص 164۔165

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)