فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2553
(176) موسم کی خرابی اور بارش کی صورت میں دو نمازوں کو جمع کرنا
شروع از بتاریخ : 17 February 2013 02:44 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

موسم خراب ہو، بارش ہو رہی ہو یا بارش ہونے کا امکان ہو تو کیا ایسی صورت میں نمازیں جمع کی جا سکتی ہیں یا نہیں؟ کیا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کبھی بارش کی وجہ سے نمازیں جمع کی تھیں؟


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

بوجہ بارش نمازیں جمع کرنا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت نہیں البتہ جمع صوری بارش میں اور بارش کے بغیر بھی کر سکتا ہے اور جمع تقدیم یا تاخیر حضر میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ثابت نہیں۔

فتاویٰ علمائے حدیث

کتاب الصلاۃجلد 1

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)