فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2543
اذان سے پہلے اور بعد میں درود شریف کا حکم
شروع از بتاریخ : 17 February 2013 02:35 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا اذان سے پہلے اور بعد میں درُود شریف مشروع ہے؟


 

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اذان کے بعد درُود مشروع ہے ۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے : « ثُمَّ صَلُّوْا عَلَیَّ » البتہ ایک گروہ کا خاص الفاظ اور خاص انداز میں اذان کے بعد درُود پڑھنا کتاب و سنت سے ثابت نہیں ۔ 
حضرت عبداللہ بن عمرو بن عاص  رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ  صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جب تم مؤذن کی آواز سنو تو مؤذن کو جواب دو اور جب اذان ختم ہوجائے تو پھر مجھ پر درُود بھیجو ۔ پس تحقیق جو مجھ پر ایک بار درُود بھیجتا ہے اللہ اس پر دس بار رحمت بھیجتا ہے۔  (مسلم،الصلاة، باب استحباب القول مثل قول المؤذن)

فتاوی احکام ومسائل

کتاب الصلاۃ ج 2 ص 171

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)