فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2465
(137) کیا مسجد بنانے والے کی ملکیت باقی رہتی ہے؟
شروع از بتاریخ : 16 February 2013 07:44 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر کسی ایک امام کا مقلد بادشاہ ہو یا کوئی اور مسجد بنا دے تو وہ مسجد بنانے والے کی ملکیت میں باقی رہتی ہے یا نہیں؟ اور ہر مسجد میں ہر مسلمان اپنے طور پر مشروع پر مستحق نماز پڑھنے کا بیک وقت و بیک جماعت ہے یا نہیں؟

___________________________________________________________

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

 مسجد بنانے والے کی ملکیت میں نہیں رہتی اور اس میں سب مسلمان بطور شروع نماز ادا کر سکتے ہیں، اور اک وقت اور ایک جماعت سے بھی پڑھ سکتے ہیں، مگر ایک ساعت ایک ہی مسجد میں دو جماعت نہیں پڑھ سکتے۔  (اہل حدیث سوہدرہ جلد نمبر ۸ ش نمبر ۳۸)

قرآن وحدیث کی روشنی میں احکام ومسائل

جلد 02


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)