فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 24535
(2) خون نہ بہنے والے جانور کا پانی میں مرنے کے بعد اس میں وضوء کرنا کیسا ہے؟
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 01 January 2018 11:19 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کھانے پینے کی چیز میں کوئی ایسا جانور گر کر مر جائے جس میں ایسا خون نہیں ہے کہ چوٹ لگنے سے بہنے لگے، ایسی چیز کے کھانے پینے یا ایسے پانی سے وضوکرنے کے بارے میں کیا حکم ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

کھانے پینے کی اشیاء اور صاف پانی وغیرہ میں گر کر اگر ایسا جانور مر جائے جس میں بہنے والا خون نہیں تو وہ شے پاک ہے۔ اور ایسے پانی سے وضوہوسکتا ہے۔

سبل السلام (۱؍ ۱۲۰)  میں ہے:

’ ثُمَّ عَدَی هذَا الحُکمُ اِلٰی کُلِّ مَا لَا نَفسَ لَه سَائِلَة کَالنَحلَة، وَالزََّنبُورِ، وَالعَنکَبُوتِ،  وَاَشَبَاه ذَالِك۔‘
  ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ حافظ ثناء اللہ مدنی

كتاب الطہارۃ:صفحہ:85

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)