فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 2440
شرعی طور پر قرض لینا اور پھر قرض کو رشوت والے مال سے ادا کرنا
شروع از بتاریخ : 14 February 2013 05:10 PM

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر کوئی شخص شرعی طور پر قرض لیوے اور اس سے مسجد بنا دے پھر رشوت وغیرہ ناجائز ذریعہ سے مال حاصل کرے، اور اس مال سے اس قرض کو ادا کرے تو ایسی مسجد بنانا شرعاً درست ہے یا نہیں؟

_________________________________________________________________

الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ایسی مسجد بنانا درست ہے شرعاً اس کے بارہ میں مسجد کا حکم ہو گا، ایسی مسجد بنانے میں ثواب کی امید ہے، اس واسطے کے قرض کے مال سے وہ شخص اس مسجد کو بنا دے گا اگرچہ اس قرض کو خبیث مال سے ادا کرے، لیکن جب وہ شخص قرض ادا کرے گا، اس وقت اس مال کے خبث کا اثر پہلے مال میں نہ ہو گا، جو قرض لیا گیا تھا، واللہ اعلم
(فتاویٰ عزیزی جلد اول ص ۲۱)

 

فتاویٰ علمائے حدیث

کتاب الصلاۃجلد 1 ص 40

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)