فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 20147
(778) سزا پانے سے پہلے توبہ سے اس حد کا ختم ہونا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 27 March 2017 09:03 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

جس عورت پر زنا کی سزا لازم ہوچکی ہو تو وہ سزا پانے سے پہلے توبہ کرلے تو کیا توبہ کرنے کے ساتھ اس سے حد ختم ہوسکتی ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اگر امام تک اس معاملہ کو لے جانے سے پہلے وہ زنا،چوری یاشراب پینے سے توبہ کرلے تو صحیح بات یہ ہے کہ جیسے محاربین سے حد ساقط ہوتی ہے  ویسے ہی اس سے بھی ساقط ہوجائے گی،اس پر اجماع ہے ،اگر وہ قابو آنے سے  پہلے توبہ کرلیں (محارب سے مراد وہ مرد جو ڈاکہ یا زمین پر فساد کرلے تو اسے پکڑنے سے پہلے کوئی سزا نہیں ہوگی۔)(شیخ الاسلام ابن تیمیہ رحمۃ اللہ علیہ   )

ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

عورتوں کےلیے صرف

صفحہ نمبر 696

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)