فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 19344
(1217) اقامت حد یا موت سے پہلے توبہ
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 28 February 2017 10:24 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر کسی پر حد زنا واجب ہوئی ہو اور وہ حد لگنے سے پہلے توبہ کر لے تو کیا اس سے اس کی حد ساقط ہو جائے گی؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

: اگر اس نے امام تک مقدمہ پیش ہونے سے پہلے زنا، چوری یا شراب نوشی سے توبہ کر لی ہو تو صحیح یہ ہے کہ اس سے حد ساقط ہو جائے گی، جیسے کہ محاربین (ملک میں دہشت گردی کرنے والے) اگر پکڑے جانے سے پہلے توبہ کر لیں تو ان سے حد ساقط ہو جاتی ہے۔ (امام ابن تیمیہ)

ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

احکام و مسائل، خواتین کا انسائیکلوپیڈیا

صفحہ نمبر 861

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)