فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 19329
(1202) برتھ ڈے منانا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 28 February 2017 09:13 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

میرا بیٹا آج کل اپنی ماں کے ساتھ رہ رہا ہے اور اس کی ماں ہر سال اس کی سالگرہ مناتی ہے۔ اس میں ماکولات و مشروبات کا اہتمام ہوتا ہے۔ بچے کی عمر کے لحاظ سے موم بتیاں جلائی جاتی ہیں اور پھر وہ انہیں بجھاتا ہے۔ اس طرح پروگرام کا آغاز ہوتا ہے۔ اس کے بارے میں شرعی حکم کیا ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

سالگرہ منانا جائز نہیں ہے، یہ بدعت ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے: "جس نے ہمارے اس دین میں کوئی ایسا کام ایجاد کیا جو اس میں سے نہ ہو تو وہ مردود ہے۔" (صحیح بخاری،کتاب الصلح،باب اذااصطلحواعلی صلح جورفالصلح مردود،حدیث:2550۔صحیح مسلم،کتاب الاقضیۃ،باب نقص الاحکام الباطلۃوردمحدثات الامور،حدیث:1718وسنن ابی داود،کتاب السنۃ،باب لزوم السنۃ،حدیث:4606۔مسند احمد بن حنبل:6/270،حدیث:26372۔) اور یہ کافروں کی مشابہت ہے اور آپ علیہ السلام کا فرمان ہے: "جو کسی قوم کی مشابہت اپنائے وہ ان ہی میں سے ہوا۔" (سنن ابی داود،کتاب اللباس،باب فی لبس الشھرۃ،حدیث:4031ومسند احمد بن حنبل:2/50،حدیث:5114۔مصنف ابن ابی شیبۃ:4/212،حدیث:19401۔) (مجلس افتاء)

ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

احکام و مسائل، خواتین کا انسائیکلوپیڈیا

صفحہ نمبر 851

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)