فتاویٰ جات
فتویٰ نمبر : 19164
(1037) نفاس والی عورت پاک ہونے تک گھر سے نا نکلے؟
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 22 February 2017 12:58 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیانفاس والی عورت کے لیے ضروری ہے کہ جب تک اس کے یہ دن پورے نہ ہو جائیں وہ گھر سے باہر نہیں جا سکتی ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نفاس والی عورت کے احکام باقی عورتوں کی مانند ہیں۔ اگر ضرورت ہو تو اس کے لیے گھر سے باہر جانے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ لیکن اگر کام نہ ہو تو سب ہی عورتوں کے لیے افضل یہ ہے کہ اپنے اپنے گھر ہی میں رہیں۔اللہ عزوجل کا فرمان ہے:

﴿وَقَرنَ فى بُيوتِكُنَّ وَلا تَبَرَّجنَ تَبَرُّجَ الجـٰهِلِيَّةِ الأولىٰ ... ﴿٣٣﴾... سورةالاحزاب

"اور اپنے گھروں میں ٹکی رہو اور سابقہ جاہلیت کے سے انداز میں اپنی زینت کا اظہار نہ کرتی پھرو۔"

(عبدالعزیز بن باز)

ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

احکام و مسائل، خواتین کا انسائیکلوپیڈیا

صفحہ نمبر 728

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)