فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 18066
(221) بیعت کرنا ضروری ہے؟
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 21 December 2016 12:44 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

لوگ کہتے ہیں کہ بیعت ہونا ضروری ہے بجز پیرومرشد کے قبر اورقیامت میں کوئی دوسرا حامی ومددگار نہیں ہوگا۔کیا یہ صحیح ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

یہ محض بازاری گپ ہے جس کوڈاکو پیروں نے اپنا حلوا مانڈہ اور نذرانہ وصول کرنے کےلیے جاہل مسلمانوں میں مشہور کررکھاہے۔قبر اورقیامت میں انسان کے اپنے نیک اعمال اورفضل الہی کےسوال کوئی چیز کام نہیں آئے گی۔پورا قرآن اوراحادیث نبویہ اس مضمون پرورشن دلیل ہیں۔

 ھذا ما عندی والله اعلم بالصواب

فتاویٰ شیخ الحدیث مبارکپوری

جلد نمبر 2۔کتاب الإمارة

صفحہ نمبر 424

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)