فتویٰ نمبر : 17756
(215)نماز یا نماز سے باہر سجدہ تلاوت اللہ اکبر کہہ کر ادا کرنا چاہیے؟
شروع از Rafiqu ur Rahman بتاریخ : 20 September 2016 03:01 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

نماز یانماز سےباہر سجدہ تلاوت اللہ اکبر کہہ کرادا کرناچاہیے یابغیر  اللہ اکبر کہے ہوئے  بھی ادا کیا جاسکتا ہے ؟ محمد سلیمان ۔از گیا ۔


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

الله اكبر کہہ کرادا کیا جائے نماز میں ھو یانماز سے باہر بلکہ نماز کےاندر سجدہ سراٹھاتےوقت بھی اللہ اکبرہ کہا جائے  قال فى المغنى 2/ 356: ’’ إذَا سَجَدَ لِلتِّلَاوَةِ فَعَلَيْهِ التَّكْبِيرُ لِلسُّجُودِ وَالرَّفْعِ مِنْهُ، سَوَاءٌ كَانَ فِي صَلَاةٍ أَوْ فِي غَيْرِهَا. وَبِهِ قَالَ ابْنُ سِيرِينَ وَالْحَسَنُ، وَأَبُو قِلَابَةَ، وَالنَّخَعِيُّ، وَمُسْلِمُ بْنُ يَسَارٍ، وَأَبُو عَبْدِ الرَّحْمَنِ السُّلَمِيُّ، وَالشَّافِعِيُّ، وَإِسْحَاقُ وَأَصْحَابُ الرَّأْيِ. وَقَالَ مَالِكٌ: إذَا كَانَ فِي صَلَاةٍ. وَاخْتُلِفَ عَنْهُ إذَا كَانَ فِي غَيْرِ صَلَاةٍ. وَلَنَا، مَا رَوَى ابْنُ عُمَرَ، قَالَ: «كَانَ رَسُولُ اللَّهِ - صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ - يَقْرَأُ عَلَيْنَا الْقُرْآنَ، فَإِذَا مَرَّ بِالسَّجْدَةِ كَبَّرَ وَسَجَدَ وَسَجَدْنَا مَعَهُ.»،، الخ .  (محدث دہلی ج: 10ش:6رمضان 1361ھ؍اکتوبر1942ء)

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ شیخ الحدیث مبارکپوری

جلد نمبر 1

صفحہ نمبر 324

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)