فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13345
(525) داڑھی رکھنا فرض ہے یا سنت
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 20 September 2014 11:04 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

داڑھی رکھنے کے متعلق اللہ اور اس کے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم  کیا فرماتے ہیں؟کیا یہ فرض ہے کہ سنت اور اور اگر سنت ہے تو مؤکدہ  یا غیرمؤکدہ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

داڑھی رکھنا واجب  ہے انبیاء  علیہ السلام  کی سنت قدیمہ ہے صحیح احادیث میں اس کی تعبیر  بصیغہ  امر کی گئی ہے جو وجوب کی دلیل ہے چنانچہ فرمایا :

«واعفوا اللحیٰ»یعنی داڑھیاں بڑھاؤ اور بعض الفاظ میں ۔«اوفوا-ارخوا-ارجوا-وفروا»ہے۔

امام نو وی  رحمۃ اللہ علیہ  شرح مسلم میں فر ما تے ہیں ۔

«ومعناه كلها :تركها علي حالها هذا هو الظاهر من الحديث الذي تقتضيه الفاظه» (٣/١٥١)

یعنی "ان تمام الفا ظ کا مفہوم یہ ہے کہ داڑھی کو اپنی حالت پر چھوڑ دو حدیث کے ظاہر ی الفاظ کا تقاضایہی ہے ۔"

دیگر بعض احادیث میں  دس امور کو فطرت قرار دیا گیا ہے ان میں سے ایک ۔«اعفاء اللحية»(داڑھی کا بڑھانا بھی ہے ۔(مسلم 3/147)

مزید وضاحت کے لیے ملا حظہ ہو ۔("اعتصام "۔11نو مبر 1994ء )

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص812

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)