فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13336
(516) مقدس کاغذات کو جلانا یا پانی بہانا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 20 September 2014 10:25 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کافی لوگوں سے سنا ہے کہ اگر اخبارات کتا بو ں یا رسالو ں میں کسی جگہ بھی اللہ کا یا نبی  صلی اللہ علیہ وسلم کا نا م آجا ئے تو اسے دیوار میں دبا دینا چاہیے  یا پانی میں بہا دینا چاہیے  یا جلا دینا چا ہیے ۔کا فی لو گو سے سنا ہے کہ جلا دینے  سے اللہ کا نام اڑجاتا ہے کیا ضائع  کر نے کے مذکو رہ طریقے  درست ہیں ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

کاغذ کا پرزہ جس پر عزوجل کا اسم ہو یا نبی صلی اللہ علیہ وسلم  کا اسم گرا می ہو اس کے ضیاع کی مذکورہ شکلوں سے کو ئی بھی اختیار کی جا سکتی ہے تا ہم مناسب معلوم ہوتا ہے کہ اسے دفن کردیا جا ئے یا پانی میں بہا دیا جا ئے ۔

اسم مبا رک کے اڑ نے کا مسئلہ بے بنیاد  ہے اس کی کو ئی دلیل نہیں ۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص808

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)