فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13182
(360) خاندانی منصوبہ بندی کس حد تک جائز ہے؟
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 13 September 2014 02:58 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

خا ندانی  منصوبہ  بندی  کس  حد تک  کر نا  جا ئز  ہے ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

اسلام  خا ندانی  منصوبہ  بندی  کا قائل  نہیں بلکہ  اس نے تکثیر  نسل  کی تر غیب دی ہے  اس قسم  کی نصوص  اہل علم  سے مخفی  نہیں ذخیرہ  احادیث  میں متعدد  روا یا ت  مو جو د ہیں  جو اس کی تر دید  کے لیے  کا فی  و شا فی  اور وافی  ہیں  ۔(واللہ ولی  التو فیق )

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص632

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)