فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13179
(357) اعضاء کی وصیت کرنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 13 September 2014 02:49 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک مسلمان  انسا ن  مرنے  سےقبل  وصیت  کر جا ئے کہ مر نے  کے بعد  اس کے اعضا ء  کسی اور کو لگا دئیے  جا ئیں  تو کیا یہ شرعاً درست ہے


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مر نے کے بعد  اپنے اعضاء  کی کسی  دوسرے  کے لئے  وصیت  کرنا درست نہیں  کیو ں کہ انسا نی بدن  اللہ  کی امانت  ہے بند ے  کی ملکیت  نہیں  اسی بنا ء   پر خود کشی  کو جرم قرار  دیا گیا  ہے ۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص631

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)