فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13123
(324) ماہِ محرم میں شادی نہ کرنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 31 August 2014 01:52 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ما ہ محر م  خصوصا ً یکم  محر م  تا 10 محروم  میں عام  طور  پر بیا ہ   شادی  نہیں کی جا تی  کیا اس  کی کو ئی شرعی  حیثیت  ہے ؟ دیگر یہ کہ  شہا دت  امام حسین  رضی اللہ تعالیٰ عنہ   کے بعد  کن کن صحابہ رضوان اللہ عنھم اجمعین  تا بعین  تبع  تا بعین  وائمہ  کرا م  فقہاء  اور علما ئے  کرا م کی شادیا ں  اس ما ہ  میں ہو ئیں ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ما ہ محرم  میں شادی  کرنا  کتا ب وسنت  میں منع  کی کو ئی  دلیل نہیں  یہ صرف جہلا ئے  امت کا من  گھڑت خود  سا ختہ مسئلہ  ہے تا ر یخی  شہادتوں  سے یہ  بات  مسلمہ  ہے کہ  حضرت  حسین  رضی اللہ تعالیٰ عنہ )  کی شہا دت  سے بہت  عرصہ  قبل  حسین  رضی اللہ تعالیٰ عنہ  کے  کے نا نا  حضرت  محمد  صلی اللہ علیہ وسلم  پر شریعت  مکمل  ہو چکی  تھی  جس  میں یہ نو ید  سنا ئی  گئی تھی ۔

﴿اليَومَ أَكمَلتُ لَكُم دينَكُم وَأَتمَمتُ عَلَيكُم نِعمَتى وَرَ‌ضيتُ لَكُمُ الإِسلـٰمَ دينًا ۚ فَمَنِ اضطُرَّ‌ فى مَخمَصَةٍ غَيرَ‌ مُتَجانِفٍ لِإِثمٍ ۙ فَإِنَّ اللَّـهَ غَفورٌ‌ رَ‌حيمٌ ﴿٣﴾... سورة المائدة

لہذا  عرصہ  بعد اس میں  تغیر  وتبد ل  کا سوال ہی پیدا نہیں ہو تا ۔بعض  اقوال  کے مطا بق  حضرت علی  رضی اللہ تعالیٰ عنہ   کا نکا ح  حضرت فاطمہ  رضی اللہ تعالیٰ عنہا  سے یکم  محرم  کو  ہوا تھا  ملا حظہ ہو ۔(الاصابۃ )باقی  رہا  شہادت  حسین  رضی اللہ تعالیٰ عنہ   کے بعد  کن  صحا بہ  یا ائمہ  کی شادیا ں  محرم  میں ہو ئی تھیں  ان تا ر یخی  واقعات  کو جمع  کر نے کی ضرورت  نہیں  کیو نکہ   یہ دور تکمیل  شر یعت  کا ہے نہ کہ  تجدید شر یعت  کا ۔ موضوع  ہذا  پر میرا  ایک تفصیلی  فتویٰ  ہفت  روزہ  "تنظیم  اہل حدیث " لا ہو ر  میں کچھ  عرصہ  قبل  شائع  ہو چکا  ہے جس  کا عنوا ن  ہے " کیا محر م  میں شادی  کر نا منع  ہے

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص609

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)