فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13072
(272)، میت کے ایصالِ ثواب کے لیے کھانا کھلانا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 30 August 2014 10:43 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

آج  کل  بعض  اہل  حدیث  بھی فو ت  ہو نے  کے بعد  وار  ثا ن  میت  ایک  دن  مقرر  کر کے  عوام  کو  اطلا ع  دے  کر بلا  کر  دیگیں  وغیرہ کھا نا  پکا  کر ایصا ل ثوا ب  کر لیا  کر تے  ہیں  کیا یہ وہی  بد عتی  ٹو لہ  کے  عمل  کے مطا بق  نہیں  جو چا لیسواں  وغیرہ  کہہ کر کر تے  ہیں ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

میت  کو ایصا  ل ثواب کا یہ طریقہ  درست  نہیں  اس لیے  کہ کتاب  و سنت  اور سلف  صا لحین  کے عمل  سے  اس کی  کو ئی  نظیر  نہیں ملتی ۔ارشا د نبوی صلی اللہ علیہ وسلم  ہے ۔

«من احدث فی امرنا ھذا ما لیس منه فھو رد» انظر الرقم المسلسل (2)

یعنی "  جو دین  میں اضا فہ  کر ے  وہ  مر دود  ہے ۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص571

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)