فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13065
(265) فوت شدہ کے ثواب کے لیے کچھ تقسیم کرنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 28 August 2014 10:51 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

آپ صلی اللہ علیہ وسلم  کے بیٹے ابراہیم جب فوت ہوئے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم  نے تیسرے دن  کھجوریں تقسیم کیں۔

(الف) ایک صحابی  رضی اللہ تعالیٰ عنہ  کا باپ فوت ہوا تو اس نے کھجوریں تقسیم کیں۔آپ صلی اللہ علیہ وسلم  نے پوچھا تو معلوم ہوا کہ اس صحابی رضی اللہ تعالیٰ عنہ  کے باپ کے ایصال ثواب کے لئے ہیں۔پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم  نے کھائیں اور صحابہ کرامرضوان اللہ عنھم اجمعین  میں تقسیم بھی کی تھیں۔

(ب) کیا یہ سب کچھ صحیح ہے یا غلط؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

مذکورہ دونوں واقعات من گھڑت ہیں۔شریعت میں ان کا کوئی ثبوت نہیں۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص566

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)