فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 13062
(262) اللہ کے نام پر جانور رکھنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 28 August 2014 10:42 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

ایک آدمی نے ایک مرغی اللہ کے نام پر پال رکھی ہے اور وہ جب بڑی ہوتی ہے تو وہ اس کو خود ذبح کرکے کھاجاتاہے اور اس کی قیمت مسجد میں دے دیتا ہے کیا درست ہے؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

بہ نیت نفلی صدقہ جانور بہتر ہے کہ اسے زبح کرکے یا زندہ صدقہ کردیا جائے۔اگر کسی وجہ سے ایسا نہ ہوسکے تو قیمت دینے میں بظاہر کوئی حرج نہیں۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص565

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)