فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 12989
(190) مذہی جماعت سے عقیدت رکھنا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 24 August 2014 10:50 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اگر کوئی شخص کسی مذہبی جماعت سے تعلق عقیدت کی حد تک رکھتا  ہو ۔اس کے جماعت کے امیر یادو ایک کے علاوہ دوسرے امکان جماعت سے حسن ظن نہ رکھتا ہوتو جماعت سے الگ رہنے سے  گناہ گار تو نہ ہوگا؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

جماعت کے بعض افراد سے حسن ظن نہ رکھنے کی وجہ اگر شرعی ہے تو یہ شخص ماجور ہے اور اگر محض دنیاوی  غرض ہے تو یہ شخص اللہ کے ہاں جوابدہ ہے۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص495

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)