فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 12936
(142) شریعت کے نقاذ کا اختیار
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 18 August 2014 02:44 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اللہ شریعت نافذ کرتے ہیں۔کیا رسول اللہ  صلی اللہ علیہ وسلم  کو بھی اختیارہے؟جب کہ قرآن میں ہے:﴿ أَمْ لَهُمْ شُرَكَاءُ شَرَعُوا لَهُم مِّنَ الدِّينِ﴾ یعنی ایسا کرناشرک ہے۔جب کہ دوسری آیات واحادیث میں ہے کہ اللہ اور  رسول نے فرض فرمایا۔یا اگر مجھ کو لوگوں کی مشقت کا ڈر نہ ہوتا تومسواک کرنا فرض قرار  دیتا ۔(1) اسی طرح تراویح کے متعلق بھی فرمایا احادیث صحیح ہیں۔اور تضادظاہر ہے۔وضاحت فرما کر ممنون فرمادیں؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

''رسول''بمعنی'' مرسل اس کو کہا جاتا ہے۔ جو دوسرے کے حکم کا پابند ہو لہذا نبی یا رسول عام حالات میں جو کچھ وضاحت کرتا ہے وہ اللہ کی طرف سے ہوتی ہے قرآن میں ہے:

﴿وَما يَنطِقُ عَنِ الهَوىٰ ﴿٣﴾... سورة النجم

شریعت مقرر کرنا صرف اللہ کا اختیار ہے مخلوق اس کے حکم کی  پابند ہے۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ

ج1ص426

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)