فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 12538
(449) فتوٰی دینے کے اہل
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 18 June 2014 11:57 AM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

شیخ الحدیث یا فتویٰ دینے کا عہدہ کن لوگوں کےلئے مختض  ہے؟ وضاحت فرمائیں۔


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

شیخ اپنے فن میں مہارت تامہ رکھنے والے کو کہتے ہیں۔ اگر ایک مسلمان عالم ، علم حدیث میں مہارت و تجربہ رکھتا ہے تو اسے شیخ الحدیث کہاجاتا ہے۔ البتہ فتویٰ دینے کےلئے کچھ اضافی شرائط ہیں ۔ یعنی مفتی کےلئے ضروری ہے کہ وہ مسلمان ،عاقل و بالغ اور شریعت کےمتعلق وجہ البصیرت گہرائی اور گیرائی رکھنے والا ہو۔یعنی  بصیرت  ایک اساسی اور بنیادی شرط ہے۔ نیز اس کےلئے بلند اخلاق اور باکردار ہونا بھی ضروری ہے ، تاکہ لوگ اس کی بات پر اعتماد کریں۔ الغرض مفتی کےلئے ضروری ہے کہ وہ علوم اسلامیہ پر پوری پوری دسترس اورگردوپیش کے حالات و ظروف پر گہری نظر رکھتا ہو۔ اس کے علاوہ عجزو نیاز کے ساتھ اللہ کے حضور جھکنے والا، احتیاط کےدامن کو تھامنے والا ، لوگوں سے حسن سلوک کا معاملہ کرنے والا اور پیچیدہ مسائل میں دیگر اہل علم سے مشورہ کرنے والاہو۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اصحاب الحدیث

ج2ص445

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)