فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 11021
(572) نئے بال اگانا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 06 April 2014 01:35 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

امریکہ میں گنج سے ختم ہونے والے بالوں کی جگہ اس طرح نئے بال اگئے جارہے ہیں کہ سر کے پچھلے حصے کے بال لے کر انہیں متعلقہ جگہ پر سر کے اگلے حصہ میں اگا دیا جاتا ہے تو کیا یہ جائز ہے ؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

ہاں یہ جائز ہے کیونکہ یہ توجو اللہ تعالی نے پیدا فرمایا ہے اسے ہی واپس لوٹانے کے باب سے ہے ، نیز یہ ازالۂ عیب کے باب سے ، یہ آرائش و زیبائش یا اللہ تعالی نے جو پیدا فرمایا ہے ، اس میں اضافہ کے باب سے نہیں ہے ۔ لہذا یہ اللہ تعالی کی خلق میں تبدیلی نہیں ہے ۔بلکہ یہ تو نقص و عیب کے ازالہ کےقبیل سے ہے ۔ ان تین آدمیوں کےقصہ سے ہمیں جو دلیل ملتی ہے وہ بھی مخفی نہ رہے ، جن میں سے ایک گنچا تھا اور اس نے بتایا تھا کہ اس کو خواہش یہ ہے کہ اللہ تعالی اس کے بال واپس لوٹا دے تو فرشتے نے اس کے سر پر ہاتھ پھیرا تو اللہ تعالی کے حکم سے اس کا گنجا پن جاتا رہا اور اسے خوبصورت بال عطا کردیے گئے تھے ۔ (صحیح البخاری، احادیث الانبیاء باب حدیث ابرص واعمی وقرع فی نبی اسرائیل ، حدیث 3464۔وصحیح مسلم ،الزہد ،باب الدنیا سجن المومن وجنۃ للکافر ، حدیث 2964)

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج4ص434

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)