فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 10884
(444) حجاموں کا مشغلہ
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 31 March 2014 04:08 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

اس شخص کے بارے میں کیا حکم ہے  جو داڑھیوں  اور سر  کے بالوں  کو مونڈتا ہو اور  اس حجام  کے بارے میں  کیا  حکم  ہے جو داڑھیوں کو مونڈتا ہو؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

داڑھی مونڈھنا حرام ہے اور داڑھی مونڈنے کے مشغلہ  کو اختیار  کرنا بھی حرام ہے۔کیونکہ یہ اس گناہ اور ظلم  کی باتوں  میں  تعاون  کے قبیل سے ہے 'جس سے منع کرتے ہوئے  اللہ تعالیٰ نے فرمایا ہے:

﴿وَتَعاوَنوا عَلَى البِرِّ‌ وَالتَّقوىٰ ۖ وَلا تَعاوَنوا عَلَى الإِثمِ وَالعُدو‌ٰنِ ۚ...﴿٢﴾... سورةالمائدة

"اور (دیکھو!) تم نیکی اور پرہیز گاری  کے کاموں میں ایک دوسرے  کی مدد کیا کرو اور گناہ اور ظلم  کے کاموں میں مدد نہ کیا کرو۔"

سر کے بالوں کو مونڈنا  شرعاً جائز  ہے  لہذا جو شخص کسی دوسرے  کا سر مونڈے تو  اسے کوئی گناہ نہیں یا سر  مونڈنے کا پیشہ  روزی کمانے  کے لیے اختیار کرے تو اس کے لیے کوئی گناہ نہیں ۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج4ص340

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)