فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 10865
(425) صحیح صورت حال معلوم کریں
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 31 March 2014 01:07 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

میں اپنے کچھ ساتھیوں کے ساتھ  مل کر ایک جگہ  سکونت  پذیر ہوں ۔ان میں سے ایک شخص کے بارے میں اچانک تبدیلی  آئی ہے کہ وہ  بہت جلد امیر ہوتا جارہاہے  حالانکہ اس کے اخراجات اس کی آمدنی سے  کہیں زیادہ ہیں'اس سے میرے دل میں اس کے بارے میں شک پیدا ہوگیا ہے  ۔ سوال یہ ہے کہ  کای اس صورت حال میں میں اس کے ساتھ  رہوں یا اس سے علیحدگی اختیار کرلوں؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

واجب یہ ہے کہ  آپ اپنے اس دوست  سے جلد اور اچانک آجانے والی دولت  کے بارے میں پوچھیں 'ہوسکتا ہے  کہ کسی نے  اسے دولت  ہبہ کردی ہو  یا اسے اپنے ہاتھ  کی کمائی ہی سے حاصل ہو ئی ہو یا اسے بطور  میراث ملی ہو'لہذا پہلے  آپ اس سےپوچھیں تاکہ  صحیح صورت حال معلوم  ہوجائے۔اگر  معلوم ہو کہ  یہ دولت  جائز طریقے سے  حاصل ہوئی ہے  تو اس سے اشکال  دور ہوجائے گا اور اگرمعلوم ہوکہ  یہ دولت  ناجائز طریقے  سے حاصل  ہورہی  ہے تو  آپ پر واجب ہے کہ  اسے سمجھائیں اور اگر  وہ سمجھانے سے بھی باز نہ آئے تو پھر اس سے علیحدگی اختیار  کرلیں تاکہ آپ اس کے ساتھ  حرام مال کھانے میں شریک نہ ہوں۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج4ص329

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)