فتاویٰ جات: متفرقات
فتویٰ نمبر : 10147
(687) اپنی نذر کے گوشت میں سے خود کھانا
شروع از عبد الوحید ساجد بتاریخ : 17 February 2014 04:29 PM
السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

کیا کسی شخص کیلئے یہ جائز ہے کہ وہ اپنی نذر کے اس گوشت میں سے کھائے جو اس نے اپنی طرف سے یا اپنے گھر کے کسی فرد کی طرف سے مانی ہو؟


الجواب بعون الوهاب بشرط صحة السؤال

وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاته!
الحمد لله، والصلاة والسلام علىٰ رسول الله، أما بعد!

نذر اطاعت کا مصرف وہ ہے جس کی نذر ماننے والے نے شریعت مطہرہ کی حدود کے اندر نیت کی ہو لہٰذا اگر اس گوشت کو فقراء میں تقسیم کرنے کی نیت کی تھی تو پھر اس کیلئے اسے کھانا جائز نہیں اور اگر اس نے اپنے دوستوں اور اہلخانہ کو جن میں سے وہ خود بھی ایک ہے‘ کھلانے کی نیت کی تھی تو پھر وہ خود بھی کھا سکتا ہے کیونکہ نبیﷺ کا ارشاد گرامی ہے:

«إِنَّمَا الأَعْمَالُ بِالنِّيَّاتِ، وَإِنَّمَا لِكُلِّ امْرِئٍ مَا نَوَى»( صحیح بخاری)

’’تمام اعمال کا درومدار نیتوں پر ہے اور ہر شخص کیلئے صرف وہی کچھ ہے جس کی اس نے نیت کی‘‘۔

اسی طرح اگر نذر میں کوئی شرط لگائی جائے یا علاقے کا کوئی رواج و دستور ہو توپھر بھی اس کے مطابق عمل ہوگا۔

ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب

فتاویٰ اسلامیہ

ج3ص550

محدث فتویٰ


تبصرہ (0)
[Notice]: Undefined index: irsloading (cache/c62f257fe6ed43eb557019d638a0d780.php:75)